حصہ : افغانستان -+

زمان اشاعت : یکشنبه, 15 آگوست , 2021 خبر کا مختصر لنک :

عمران خان کے قومی سلامتی مشیر کا امریکی درخواست پر جواب

عمران خان کے قومی سلامتی کے مشیر معید یوسف نے کہا: امریکہ کو پاکستان پر زور دینے کے بجائے سرحد پر مکسیکی تارکین وطن کے حوالے سے اپنی پالیسی واضح کرنی چاہیے۔


پاکستانی اخبار نیشن کے مطابق ۶ اگست ۲۰۲۰ کو امریکہ نے پاکستان سے کہا تھا کہ وہ اپنی سرحدیں افغانستانی مہاجرین کے لیے کھول دے۔

عمران خان کے قومی سلامتی کے مشیر معید یوسف نے ایک نیوز کانفرنس میں صحافیوں کو بتایا: انہیں ایسا کہنے کا کوئی حق نہیں ہے، بلکہ انہیں پاکستان اور دیگر افغانستان کے پڑوسیوں پر افغانستان کے حالات کے نتائج پر تحفظات پر توجہ دینی چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا: ۱۹۷۹ سے اب تک پاکستان لاکھوں افغانستانیوں کی میزبانی کر رہا ہے، جس کی وجہ سے ہماری محدود اقتصادی صلاحیت کے مد نظر بہت سے مسائل پیدا ہوئے ہیں، لیکن ہم پھر بھی اپنے افغانستانی بھائیوں کو خوش آمدید کہتے ہیں۔

درحقیقت افغانستانیوں کے بے گھر ہونے کی بنیادی وجہ امریکہ ہے اور عالمی برادری کے خدشات کا جواب دینے کے بجائے وہ خطے سے جلدی نکل گئے ہیں ہے، اور اپنی ذمہ داریوں سے کنارہ کش ہو کر وہ دوسروں سے توقع رکھتے ہیں کہ دوسرے اپنی سرحدیں کھول دیں۔ امریکہ خود میکسیکو اور کینیڈا کی سرحدوں پر تارکین وطن کے بارے میں سخت پالیسی رکھتا ہے، بہت سے تارکین وطن کو امریکہ چھوڑنے پر مجبور کرتا ہے، اور ممکنہ طور پر وہ بچے جو اپنے خاندانوں سے الگ ہو جاتے ہیں وہ پھر دوسرے ممالک میں نقل مکانی پر مجبور ہوتے ہیں۔

شریک یي کړئ!
[bws_google_captcha]

منتخب خبریں